جس نے سمجھا عشق محبوب خدا کیا چیز ہے

 

جس نے سمجھا عشق محبوب خدا کیا چیز ہے

وہ سمجھتا ہے دعا کیا، مدعا کیا چیز ہے

 

کوئی کیا جانے کہ شہر مصطفی کیا چیز ہے

پوچھئے ہم سے مدینے کی ہوا کیا چیز ہے

 

شافع محشر کے دامن میں چھپا بیٹھا ہوں میں

کیا خبر ہنگامہ روز جزا کیا چیز ہے

 

ہر مرض میں خاک راہ مصطفیٰ ہے کارگر

سامنے اکسیر کے کوئی دوا کیا چیز ہے

 

دل منور ہوگیا آنکھیں منور ہو گئیں

اللہ اللہ سبز گنبد کی فضا کیا چیز ہے

 

یہ سمجھنا ہم نے سمجھا ہے شہ لولاک سے

خلق میں ٹوٹے ہوئے دل کی صدا کیا چیز ہے

 

مطمئن ہو جائے گا دم بھر میں قلب مضطرب

دیکھ لو ذکر نبی یاد خدا کیا چیز ہے

 

حشر میں تم کو گنہ گارو پتا چل جائے گا

سایہ لطف محمد مصطفی کیا چیز ہے

 

رحمت عالم ، شفیع المذنبین، شاپ امم

ایک ذات مصطفی ہے اور کیا ، کیا چیز ہے

 

زلف و روئے مصطفی کو دیکھ کر سمجھا نصیرؔ

صبح گلشن ، بوئےگل، باد صبا کیا چیز ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

نامِ شاہِ امم دل سے لف ہو گیا
بشر کی تاب کی ہے لکھ سکے حلیہ محمد کا
ہم بھی مدینے جائیں گے آج نہیں تو کل سہی
پنچھی بن كر سانجھ سویرے طیبہ نگریاجاؤں
آپ کا نامِ نامی ہے وردِ زباں ہے مِرے دل میں ہے بس آرزو آپ کی
آنکھوں نے جہاں خاک اُڑائی ترے در کی
کب چھڑایا نہیں ہم کو غم سے کب مصیبت کو ٹالا نہیں ہے
جبین شب پر رقم کیے حرف کہکشاں کے
جہاں کی خاک کا ہر ذرہ اک نگینہ ہے
دیارِ احمد مختار چل کے دیکھتے ہیں

اشتہارات