اردوئے معلیٰ

حاجیو! آؤ شہنشاہ کا روضہ دیکھو

کعبہ تو دیکھ چکے کعبہ کا کعبہ دیکھو

 

آبِ زم زم تو پیا خوُب بُجھائیں پیاسیں

آؤ جودِ شہِ کوثر کا بھی دریا دیکھو

 

زیرِ میزاب ملے خوب کرم کے چھینٹے

ابرِ رحمت کا یہاں زور برسنا دیکھو

 

دھوم دیکھی ہے درِ کعبہ پہ بیتابوں کی

ان کے مشتاقوں میں حسرت کا تڑپنا دیکھو

 

خوب آنکھوں سے لگایا ہے غلافِ کعبہ

قصر محبوب کے پردے کا بھی جلوہ دیکھو

 

واں مطیعوں کا جگر خوف سے پانی پایا

یاں سیہ کاروں کا دامن پہ مچلنا دیکھو

 

غور سے سن تو رضاؔ کعبہ سے آتی ہے صدا

میری آنکھوں سے مرے پیارے کا روضہ دیکھو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات