اردوئے معلیٰ

Search

حبِّ دنیا کو عشقِ احمدی بنا ڈالیں

کیوں نہ ہم فقیری کو خسروی بنا ڈالیں

 

رحمتِ دوعالم پر ہم درود پڑھ پڑھ کے

زیست کے اندھیرے کو روشنی بنا ڈالیں

 

اپنی ذاتِ کمتر کو، اپنی ذات کمتر کو

نسبتِ پیمبَّر سے قیمتی بنا ڈالیں

 

مدحتِ خدا سے ہم دل کو تازگی بخشیں

سیرتِ شہہ دیں سے زندگی بنا ڈالیں

 

آج بھی مرے آقا کے غلام ایسے ہیں

جو سیاہ کاروں کو متّقی بنا ڈالیں

 

مشکلیں جو آئی ہیں کس لیے پریشاں ہیں

اپنی بگڑی کو کہہ کے یا علی بنا ڈالیں

 

ہاں وہ شاہِ جیلاں ہیں نام عبد القادر ہے

چور کو بھی لمحوں میں جو ولی بنا ڈالیں

 

دے کے علم قرآں کا اور نبی کی سنّت کا

اپنے پیارے بچوں کی زندگی بنا ڈالیں

 

مغربی تمدّن سے ہم نجات جو چاہیں

گھر کو ذکرِ آقا سے برکتی بنا ڈالیں

 

میرے آقا اے "​زاہد” ایسے معجزاتی ہیں

ڈال دیں نظر جس پر جنّتی بناڈالیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ