حرف میں ، صوت میں آ ، ذوق میں ، وجدان میں آ

حرف میں ، صوت میں آ ، ذوق میں ، وجدان میں آ

اذنِ اظہار عقیدت مرے امکان میں آ

 

جَل اُٹھیں بامِ تمنا پہ تکلُم کے چراغ

لمعہَ مدحِ نبی ! نطق کے ارمان میں آ

 

مَیں گدائے درِ توصیف تہی داماں ہُوں

مدحتِ شاہِ دو عالَم ! مرے سامان میں آ

 

توشہَ اسمِ سکینت بہ نویدِ بخشش

بہرِ اعجازِ شفاعت مری میزان میں آ

 

لے کے بیٹھا ہُوں سرِ اَوجِ سخن حرفِ طَلب

شوقِ امکانِ ثنا! آ کسی عنوان میں آ

 

اَبرِ احسانِ مسلسل مری حیرت پہ برس

زرِ توصیفِ معلی مرے دامان میں آ

 

بامِ اُمید پہ بجھنے کو ہے قندیلِ نظر

طلعتِ خوابِ عنایت مرے حرمان میں آ

 

مجھ کو اب لکھنی ہے مقصودِؔ سخن کی مدحت

حرف کے جملہ تجمل مرے دیوان میں آ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ