اردوئے معلیٰ

Search

دل دیارِ عشق کی گلیوں میں کھونا چاہیے

جذبِ ہجرِ مصطفیٰ میں روز رونا چاہیے

 

دو جہانوں میں خلاصی کے لیے لازم ہے یہ

ذکرِ احمد دم بہ دم ہونٹوں پہ ہونا چاہیے

 

جو ہے مشتاقِ لقاے رحمتہ اللعالمین

رُخ اسے طیبہ کی جانب کر کے سونا چاہیے

 

دل بہ ضد ہے اس لیے کہ بعد مرنے کے اسے

قبر میں خاکِ مدینہ کا بچھونا چاہیے

 

ابتدا و انتہا میں صوت شامل ہو یہی

نعرۂ اسمِ نبی ایسا تو ہونا چاہیے

 

نعت اُن کی شان کے شایاں نہیں ہوتی مگر

نعت کا ہر شعر اشکوں میں پرونا چاہیے

 

طالبِ جنت ہے گر تو چل مدینے کو چلیں

کارِ عصیاں نور کی بارش سے دھونا چاہیے

 

ہیں اگرچہ مہد میں لیکن مجسم نور ہیں

کھیلنے کو کم سے کم نوری کھلونا چاہیے

 

یا رسولِ کبریا منظر کو رہنے کے لیے

شہرِ کیف و عشق میں بس ایک کونا چاہیے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ