اردوئے معلیٰ

Search

ذِکرِ سرکار ہر زباں پر ہے

نگہِ سرکار ہر جہاں پر ہے

 

اُن کا سایا ہے سب زمانوں پر

نقشِ پا اُن کا آسماں پر ہے

 

اُن کی رحمت ہے عالمیں کے لیے

اُن کا احسان ہر زماں پر ہے

 

جھولیاں سب کی بھرتی جاتی ہیں

ایک میلہ سا آستاں پر ہے

 

جس جگہ اُن کا نقشِ پا دیکھا

میں نے سر رکھ دیا وہاں پر ہے

 

میں نے تاریخ چھان ڈالی ہے

آپ جیسا کوئی کہاں پر ہے

 

تُجھ سا خوش بخت کون ہو گا ظفرؔ!

اُن کا سایا ترے مکاں پر ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ