اردوئے معلیٰ

Search

رب نے قرآنِ مبیں کی بخش دی ہے روشنی

غور تو کر خشک و تر کی اس میں ہے جلوہ گری

 

مانگتا ہے اس سے دنیا کا ہر اِک شاہ و گدا

اس کا ہی محتاج ہے دنیا کا ہر اِک آدمی

 

پرچم ربِّ عُلا لہرارہا ہے ہر طرف

حکمراں ہے اِک وہی باقی بتانِ آذری

 

جو خدا کے ہو گئے اُن پر کرم کی بارشیں

رب نے بخشی خاص اُن کو زندگی کی روشنی

 

ابتدا ہو حمد سے بعد اُس کے میری ہے دُعا

ہر نفس کہتا رہوں ، کہتا رہوں میں یا نبی

 

تیری ہی توفیق سے کچھ کوششیں کرتے ہیں ہم

یا الٰہی ! کاش کر پائیں تری ہم بندگی

 

ساری دنیا میں سجاؤں محفلِ حمد و ثنا

میرے قلب و رُوح کی خواہش یہی ہے آخری

 

رب کو راضی کر لے طاہرؔ وقت کو ضائع نہ کر

زندگی ہوتی ہے ہر اِک آدمی کی عارضی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ