رحمت کا اِک جہان ہے کوچہ حضور کا

رحمت کا اِک جہان ہے کوچہ حضور کا

رِفعت کا آسمان ہے کوچہ حضور کا

 

دُنیا میں رنگ و نور کی روشن مثال ہے

خوشیوں کا پاسبان ہے کوچہ حضور کا

 

بہرِ گناہ گار ہے بخشش کا راستہ

خُلدِ بریں کی جان ہے کوچہ حضور کا

 

راحت، سکون، امن و اماں، بندگی کا حُسن

جود و سخا کی کان ہے کوچہ حضور کا

 

وہ دِل تو خوش نصیب ہدایت کا ہے نگر

جس دِل کا میزبان ہے کوچہ حضور کا

 

سب عاصیوں کے سر پہ رضاؔ غَم کی دھوپ میں

راحت کا سائبان ہے کوچہ حضور کا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

اُنؐ کے رستوں کی گردِ سفر مانگنا
مری اوقات کیا ہے اور کیا میری حقیقت ہے
مری زبان پہ ان کی ہے گفتگو اب تک
سطوتِ شاہی سے بڑھ کر بے نوائی کا شرَف
اے جانِ نِعَم ، نقشِ اَتَم ، سیدِ عالَم
مرا دل تڑپ رہا ہے
بنایا ہے حسیں پیکر خدا نے مشک و عنبر سے
ان کے در کا جس گھڑی سے میں گداگر ہوگیا
ارض و سما میں جگمگ جگمگ لحظہ لحظہ آپ کا نام
وہ جدا ہے راز و نیاز سے کہ نہیں نہیں بخدا نہیں