اردوئے معلیٰ

Search

زمیں پہ رب نے اتارا حسین ابن علی

فرازِ عرش کا تارا حسین ابن علی

 

نبی کے شانے نہ تھکتے سوار کر کے جسے

وہ رب کے نور کا دھارا حسین ابن علی

 

علی ولی کی ولایت کا رکھنا سارے بھرم

بچا کے دین پکارا حسین ابن علی

 

یہ کس نے آلِ نبی کو بھلا دیا ایسے

کہ کربلا میں اتارا حسین ابن علی

 

لبِ فرات نہ پانی پلا سکا جس کو

وہ تشنہ لب ہے ہمارا حسین ابن علی

 

مماثلت ہے زبان و بیاں میں نانا سے

ہے تن بدن میں بھی سارا حسین ابن علی

 

یہ دین و دنیا سمندر سے ہیں بہت گہرے

مگر ہے ان کا کنارا حسین ابن علی

 

وہ جس نے موت کو دے دی شکست کربل میں

نبی کا وہ ہے دلارا حسین ابن علی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ