سرِافلاک تھی سرکارؐ کی جب آمد آمد

سرِافلاک تھی سرکارؐ کی جب آمد آمد

زمانے سرنگوں تھے اور گزرتا وقت جامد

ثناؤں کی درُودوں کی دما دم گونج ہر سُو

وہاں جلوہ نما تھے با خُدا محمودؐ حامدؐ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

جس در سے کوئی شاہ و گدا خالی نہ لوٹا
رحمتِ داور، سرورِ عالم صلی اللہ علیہ وسلم
جو لوگ خدا کی ہیں عبادت کرتے
مرے دل کی صدا، حبیبِ خداؐ
صاحبِ حُسن و جمال آیا ہوں
حبیبِ کبریا بن کر شہِ ارض و سما آئے
مرے مولا مجھے دل شاد رکھنا
فغانِ خادمِ ناشاد سُن لیں
کس زباں سے میں کروں حمد خدائے قیوم
’’تیری نسلِ پاک میں ہے بچّہ بچّہ نوٗر کا‘‘