سرِافلاک تھی سرکار کی جب آمد آمد

سرِافلاک تھی سرکار کی جب آمد آمد

زمانے سرنگوں تھے اور گزرتا وقت جامد

ثناؤں کی درُودوں کی دما دم گونج ہر سُو

وہاں جلوہ نما تھے با خُدا محمود حامد

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ