اردوئے معلیٰ

سرکار خطا کار ہوں رحمت کی نظر ہو

بخشش کا طلبگار ہوں رحمت کی نظر ہو

 

ہر لمحہ تصوّر میں ہے سرکارِ مدینہ

میں حاضرِ دربار ہوں رحمت کی نظر ہو

 

فرقت میں شہا دل کو میرے چین نہیں ہے

میں طالبِ دیدار ہوں رحمت کی نظر ہو

 

آجائے کسی روز تو طیبہ سے بُلاوا

ہر لمحہ میں تیار ہوں رحمت کی نظر ہو

 

بس میں ہو، اگر میرے تو کیوں دیر کروں میں

مجبور ہوں لاچار ہوں رحمت کی نظر ہو

 

میں بھی ہوں خیالؔ آپ کا اے رحمتِ عالم

آقا میں گنہگار ہوں رحمت کی نظر ہو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات