اردوئے معلیٰ

سمندر، کوہ و بن، ارض و سما ہیں

ثمر، غنچہ و گل، تازہ ہوا ہیں

کوئی اِن کو ظفرؔ جھٹلائے کیسے

خدا کی نعمتیں بے انتہا ہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات