ضمیر اختر نقوی کا یوم پیدائش

آج معروف خطیب اور دینی رہنما ضمیر اختر نقوی کا یوم پیدائش ہے

 ضمیر اختر نقوی (پیدائش: 24 مارچ 1940ء – وفات: 13 ستمبر 2020ء)
——
ضمیر اختر نقوی ایک پاکستانی عالم، مذہبی رہنما، خطیب اور اردو شاعر تھے۔
ضمیر اختر نقوی کی پیدائش برطانوی ہند میں ہوئی تھی۔ وہ 24 مارچ 1944ء کو بھارت شہر لکھنؤ میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد کا نام سید ظہیر حسن نقوی تھا جب کہ ان کی والدہ کا نام سیدہ محسنہ ظہیر نقوی تھا۔ پیدائش کے وقت ان کا نام ظہیر رکھا گیا تھا۔
اختر نقوی 1967ء میں نقل مکانی کر کے پاکستان آ گئے۔ اور مستقلًا کراچی شہر میں سکونت اختیار کی۔ تعلیمی اعتبار سے وہ لکھنؤ کے حسین آباد اسکول سے میٹرک اور گورنمنٹ جوبلی کالج، لکھنؤ سے انٹر میڈیٹ پاس تھے۔ انہیں گریجویشن کی سند شیعہ کالج لکھنؤ سے حاصل ہوئی۔
آپ کو سائنس، فلاسفی، کمپیوٹر ٹیکنالوجی، لٹریچر، کلچر، جرنلزم، سوشیالوجی، اسلامک ہسٹری پر عبور حاصل تھا۔
علامہ صاحب میر انیس اکیڈمی کے صدر بھی تھے۔ اس کے علاوہ آپ میگزین آل کلام کے ایڈیٹر ان چیف بھی تھے۔
علامہ ضمیر نقوی کو بطور ایک شیعہ عالمِ دین، مرثیہ نگاری سے بےحد دلچسپی تھی۔ مرثیہ نگاری کی تاریخ میں اور اردو زبان کے مشہور مرثیہ نویس میر انیس، مرزا دبیر اور جوش ملیح آبادی پر آپ نے متعدد کتابیں لکھیں۔ آپ کی مشہور تصانیف میں شعرائے مصطفیٰ آباد، اردو ادب پر تذکرہ، واقعۂ کربلا کے اثرات، اقبال کا فلسفۂ عشق اور شعرائے لکھنؤ شامل ہیں۔ ادبی تنقید اور نثر نگاری بھی علامہ ضمیر اختر نقوی کے اہم موضوعات رہے ہیں۔ آپ نے عمران سیریز کے ناول نگار ابنِ صفی کی ناول نگاری پر بھی ایک کتاب تحریر کی۔ یوں علامہ صاحب نے مجموعی طور پر 300 سے زائد کتابیں تحریر کی ہیں۔
——
یہ بھی پڑھیں :
——
اگر علامہ ضمیر اختر نقوی کی دیگر کتب پر نظر ڈالی جائے تو معلوم ہوتا ہے کہ آپ کی مجالس کو بھی کتب کی شکل میں محفوظ کیا گیا جس میں عظمتِ صحابہ، امام اور امت، ظہورِ امام مہدی علیہ السلام، احسان اور ایمان، محسنینِ اسلام اور دیگر اہم ترین مجالس شامل ہیں۔
——
تصانیف
——
علامہ ضمیر آختر صاحب کی چند مشہور کتب درج ذیل ہیں:
تاریخ مرثیہ نگاری
میر انیس، زندگی اور شاعری
مرزا دبیر حالاتِ زندگی اور شاعری
جوش ملیح آبادی کے مرثیے
شعرائے اردو اور عشق علی
اردو مرثیہ، پاکستان میں
خاندان میر انیس کے نامور شعرا
اردو ادب پر واقعہ کربلا کے اثرات
دبستان ناسخ
تذکرہ شعرائے لکھنؤ
اقبال کا فلسفہ عشق
شعرائے اردو کی ہندی شاعری
ابن صفی کی ناول نگاری
شعرائے مصطفی آباد
میر انیس (ہر صدی کا شاعر)
میر انیس کی شاعری میں رنگوں کا استعمال
میر انیس بحیثیت ماہرِ علمِ حیوانات
نوادرات مرثیہ نگاری (دو جلدیں)
اردو غزل اور کربلا
سوانح حیات جنابِ فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا
سوانح حیات جنابِ خدیجۃ الکبریٰ
سوانح حیات جنابِ شہر بانوؑ
سوانح حیات حضرت عباس علمدارؑ
سوانح حیات جنابِ شہر بانوؑ
سوانح حیات شہزادہ علی اکبر ؑ
سوانح حیات جنابِ شہزادہ علی اصغرؑ
سوانح حیات شہزادہ قاسم ابنِ حسنؑ (دو جلدیں)
شہزادہ قاسم کی مہندی
معصوموں کا ستارا شہزادہ علی اصغرؑ
معراجِ خطابت (5 جلدیں)
مجالسِ محسنہ
عظمتِ صحابہ (عشرہ مجالس)
عظمتِ ابو طالبؑ (عشرہ مجالس)
امام اور اُمت (عشرہ مجالس)
ظہورِ امام مہدی (عشرہ مجالس)
احسان اور ایمان (عشرہ مجالس)
قاتلانِ حسینؑ کا انجام (عشرہ مجالس)
قرآن کی قَسمیں (عشرہ مجالس)
محسنین اسلام (عشرہ مجالس)
امہات المعصومین (عشرہ مجالس)
دس دن اور دس راتیں (عشرہ مجالس)
علم زندگی ہے (عشرہ مجالس)
The valuable manuscripts of Urdu Marsia writing (2004)
Study of Elegies of Mir Anees (2004)
Hazrat Fatima Zehra(S.A.W) (2007)
Greatness of Bibi Zainab(A.S) (2007)
Princess Zainab And History of Syria (2008)
Great Biography of Umme Kulsoom(A.S)(2011)
Biography of Prince Qasim Ibn Imam Hassan(A.S) (part 1)
Biography of Prince Qasim Ibne Imam Hassan(A.S) (part 2)
Prince Qasim(A.S)’s Henna (2010)
Prince Ali Asghar(A.S) (2010)
Iran’s Princess Hazrat-e-Shehar Bano(A.S) (2010)
Biography of Hazrat Jaffar-e-Taeyaar
The Victory of Imam Hassan(A.S) and The Defeat of Enemy of God (2008)
Hazrat Ali’s Divine Sword Zulfiqar in the Light of Quran And Hadees (2010)
Zuljinah (2008)
Poet of the Ages Mir Anees (2008)
Grief of Imam Hussain(A.S) And Intercession of Azadar
Garden of Nasikh (2011)
Ali And Absolute Knowledge
Hazrat Aqeel (A.S). The first cousin of Mohammad
Ehsaan(Feels)
Martyr Scholars of the truth
Artefacts of Marsiya Nigger (part 1)
Artefacts of Marsiya Nigger (part 2
Ascension of Speech (part 1)
Ascension of Speech (part 2)
Ascension of Speech (part 3)
Ascension of Speech (part 4)
Ascension of Speech (part 5)
Enhancer of Islam Bibi Khadija-tul-Kubbra(A.S)
Emergence OF Imam-e-Mahdi
Rulership OF Ali(A.S)
Mir Anees As an Expert of Animals(2011)
Scripture of Zameer (2007)
Hazrat Ali in the Battle Field
Greatness of Companion
Greatness OF Abu Talib(A.S)
Situations and the Actions of Syed Hussain Sharf-ud-Deen Shah Wilayat
——
وفات
——
13 ستمبر 2020ء کو بعارضہ قلب کراچی میں بعمر 80 برس وفات پا گئے، ان کو رات گئے آغا خان ہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ لیکن جانبر نہ ہو سکے، انچولی امام بارگاہ میں نماز جنازہ ادا کی گئی، قبرستان وادی حسین میں تدفین ہوئی
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ