اردوئے معلیٰ

Search

عالمِ کل پہ کرم رب کا سوا ہوتا ہے

ہاں مگر حقِ خدا کس سے ادا ہوتا ہے

 

چاہتا جو ہے وہی ہوتا ہے لوگو ، ورنہ

رب کی مرضی کے سوا دہر میں کیا ہوتا ہے

 

نکہت و نور مرے گھر میں چلے آتے ہیں

جس گھڑی لب پہ مرے ذکرِ خدا ہوتا ہے

 

چل نہیں سکتا وہاں حملۂ شیطاں ہرگز

ذکرِ معبود جہاں صبح و مسا ہوتا ہے

 

با وضو پڑھتے رہو سورہ ’’ فلق ‘‘ اے لوگو !

جادو کیسا بھی ہو اِک پل میں ہوا ہوتا ہے

 

مصرع سچا ہے یہ مینائی کا تم بھی سن لو

’’ ناخدا جن کا نہ ہو ان کا خدا ہوتا ہے ‘‘

 

مالک کل کی رضا ہوتی ہے حاصل اس کو

سجدہ طاہرؔ جو عقیدت سے ادا ہوتا ہے

 

آگہی ہم کو یہ قرآں سے ملی ہے طاہرؔ

رب کے محبوب جو فرمائیں بجا ہوتا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ