محمدؐ کا حُسن و جمال اللہ اللہ

محمدؐ کا حُسن و جمال اللہ اللہ

وہ اک پیکرِ بے مثال اللہ اللہ

 

نہ اُن سے کوئی خوبرو دو جہاں میں

نہ اُن سا کوئی خوش خصال اللہ اللہ

 

خدا کا ہوا اور مہماں نہ کوئی

یہ عظمت یہ رُتبہ کمال اللہ اللہ

 

ہے زیرِ نگیں سطوتِ ہر دو عالم

مُحمد کا رُعب و جلال اللہ اللہ

 

بُتانِ عرب پہ ہوا طاری لرزہ

اذاں دے رہے ہیں بلال اللہ اللہ

 

ثنا خوانی مصطفے کی بدولت

ظہوریؔ بنے شیریں مقال اللہ اللہ​

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

مرے محبوب، محبوبِ زماںؐ ہیں
نظر کا دھوکہ ہے نام و نمود لا موجود
اے ختمِ رسل نورِ خدا شاہِ مدینہ
شعبِ احساس میں ہے نور فِشاں گنبدِ سبز
حشر میں پھیلے گا جب سایۂ غُفرانِ وسیع
حرف، احساس سے فائق نہیں ہونے والے
سب سے اعلٰی ہیں سب سے برتر ہیں
پردۂ ہجر نگاہوں سے سرکتا دیکھوں
مجھ کو یقیں ہے آئے گی امید بر کبھی
یہ جو میری آنکھیں ہیں میرے رب کی جانب سے مصطفےٰ کا صدقہ ہیں

اشتہارات