اردوئے معلیٰ

Search

مرے نصیب میں محفل کی میزبانی ہے

مجھے خبر ہے کہ اْسی نے غزل سنانی ہے

 

فقیر لوگ تھے دریا اٹھا کے لے آئے

اگرچہ اس نے کہا تھا کہ آگ لانی ہے

 

یہ لڑکھڑانا کوئی لڑکھڑانا تھوڑی ہے

میں جانتا ہوں ہزیمت کسے اٹھانی ہے

 

یہ کیا کہ آنکھ بیاں کر رہی ہے حالِ دل

یہ ترجمانی بھلا کوئی ترجمانی ہے

 

اگر یقین ہے تجھ کو مری محبت کا

تو کس لیے تری باتوں میں بدگمانی ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ