اردوئے معلیٰ

Search

ٹھکانا ہر جگہ تیرا ہے منزل چار سُو تیری

تجھے میں نے وہیں پایا جہاں کی جستجو تیری

 

جسے محبوب سمجھا شانِ لولاکی عطا کر دی

جسے چاہا وہ ٹھہرا دو جہاں میں آرزو تیری

 

کبھی ایمن کی وادی میں کبھی فاراں کی چوٹی پر

ہوئی ہے جا بہ جا جلوہ گری اے شمع رُو تیری

 

ترے بحرِ کریمی کا کرے گا کون اندازہ

کرم ہے یم بہ یم تیرا رحمت جو بہ جو تیری

 

ترے بس میں دل و دیدہ یہ گرویدہ وہ نادیدہ

نظر کو جستجو تیری تو دل کو آرزو تیری

 

یہ قہّاری و جبّاری بجا اپنی جگہ مولا

امید افزا ہے لیکن آیت لاتقنطو تیری

 

حجاباتِ تعین لاکھ پردہ دار ہیں لیکن

تماشا جا بجا تیرا تجلی کو بکو تیری

 

عنادل تیری مدحت میں ہیں مصروفِ نوا سنجی

ثنا خوانی چمن میں کر رہے ہیں رنگ و بو تیری

 

نبی کی عبدیت نے فرق پیدا کر دیا ورنہ

تھا جلوہ من و عن تیرا ، تھی صورت ہو بہو تیری

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ