اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

کہیں آباد ہو جانے سے اچھا

کہیں آباد ہو جانے سے اچھا

تمہاری راہ میں برباد رہنا

 

ہماری آنکھ پہ لکھا ہوا ہے

یہاں خوابوں کی گنجائش نہیں ہے

 

گزر جاتے ہیں اپنا منہ چھپائے

مرے خوابوں نے پردہ کر لیا ہے

 

وہاں جانا ضروری ہو گیا تھا

کسی کی بات کرنی تھی کسی سے

 

ہماری چاند سے بننے لگی ہے

ستارے خوامخواہ لڑنے لگے ہیں

 

مجھے افسوس ہے میری ہنسی پر

تجھے حیران ہونا پڑ رہا ہے

 

سبھی رنج و الم سہرا سجا کر

مری ڈولی اُٹھانے آ رہے ہیں

 

سہارے، ضبط، آنسو، رنج، کلیاں

جنازے میں کمی کوئی نہیں ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

اگر سزا ہے مقدر تو کیا جزا کی طلب!
بے بسی کے شہر میں ہم زندگی سے تنگ ہیں
یہی دعا ہے رہیں سبز ہی ترے موسم
اُس نے اتنا تو کرلیا ہوتا
جسم سے روح کا جدا ہونا
دیکھ رہا تھا ہنستی کھیلتی آنکھوں کو
کسے معلوم کیسا ہے کسی کھوئے ہوئے کا غم
قدم قدم تے پِیڑ وے عشقا
دکھ تماشا لگائے رکھتا ہے
میرے سارے موسم تم ہو