اردوئے معلیٰ

یہ بسمل خستہ دل آتش بجاں تیرا ہے یا میرا

مسلماں خاکداں میں میہماں تیرا ہے یا میرا

 

بجا ہے شک ترا یا رب مرے اخلاصِ طاعت پر

قصور و حور کا لیکن بیاں تیرا ہے یا میرا

 

علوم و آگہی میری ہے گرچہ فتنہ زا لیکن

یہ کارِ کشفِ اسرارِ جہاں تیرا ہے یا میرا

 

نگاہ و دل کی لغزش پر سزاوارِ سزا ہوں میں

مگر یہ فتنۂ حسنِ بتاں تیرا ہے یا میرا

 

ستم کش آہ کش بندے نظرؔ آتے ہیں گر تیرے

تو ہی بتلا دے مجھ کو آسماں تیرا ہے یا میرا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات