اردوئے معلیٰ

Search

قلم کو تھام لیجے عاجزی سے

نبی کی نعت لکھیے سادگی سے

 

جو دل لبریز ہے عشق نبی سے

نہیں ڈرتا کبھی وہ جاکنی سے

 

قمر سے خوبرو ہے ان کا چہرہ

نہیں تشبیہ دیتا چاندنی سے

 

یہی فرمان ہے میرے نبی کا

سلامت آدمی ہو آدمی سے

 

بھلائی کر بھلا تیر ا بھی ہو گا

"​سبق ہم کو ملا یہ ز ندگی سے”​

 

وہی خالق وہی رازق ہے نوری

بھلا ہو خوف مجھ کو کیوں کسی سے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ