مجھے بھی بلایا ہے ، الحمد للہ

مجھے بھی بلایا ہے ، الحمد للہ

کرم کا وہ سایہ ہے ، الحمد للہ

 

مدینہ سے مکہ کیا ہے سفر بھی

بڑا لطف آیا ہے ، الحمد للہ

 

ملے جس پہ چل کر ہمیں اس کی جنت

وہ رستہ دکھایا ہے ، الحمد للہ

 

پرندوں سے پھولوں سے اشجار سے اک

چمن بھی سجایا ہے ، الحمد للہ

 

اطاعت محمد ، خدا کی اطاعت

یہ قرآں میں آیا ہے، الحمد للہ

 

محمد کو بھیجا تو احساں جتایا

ہمیں خود بتایا ہے ، الحمد للہ

 

خلیل اس خدا کا کرو شکر ہر دم

مسلماں بنایا ہے ، الحمد للہ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

میں تیرا فقیر ملنگ خدا
تو اعلیٰ ہے ارفع ہے کیا خوب ہے​
حمد و ثنا سے بھی کہیں اعلیٰ ہے تیری ذات
دردِ دل کر مجھے عطا یا رب
شعور و آگہی، فکر و نظر دے
خدا اعلیٰ و ارفع، برگزیدہ
خدا مجھ کو شعورِ زندگی دے
میں بے نام و نشاں سا اور تو عظمت نشاں مولا
خدا ہی بے گماں خالق ہے سب کا
خدا آفاق کی روحِ رواں ہے

اشتہارات