اردوئے معلیٰ

نیند شب میں بھٹک گئی ہے کیا

نیند شب میں بھٹک گئی ہے کیا

کوئی خوشبو مہک گئی ہے کیا

خون دل قطرہ قطرہ گرتا ہے

چشم پُرنم چھلک گئی ہے کیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ