اردوئے معلیٰ

Search

وہ گھر وہ کوچہ وہ قریہ مکانِ رحمت ہے

رہا جو آپ کا مسکن جہانِ رحمت ہے

 

پڑھا جو آپ سے کلمہ نشانِ رحمت ہے

’’ آپ کا اسوہ جہانِ رحمت ہے ‘‘

 

حضور ! آپ کے دل پر خدا کا ہے احساں

حضور ! آپ کے لب پر بیانِ رحمت ہے

 

غدیرِ خم پہ یہ آقا نے ہم سے فرمایا

علی زمانے کا مولا بھی جانِ رحمت ہے

 

اگر بلال نہ دیتے اذاں نہ ہوتی سحر

بلال نے جو سنائی اذانِ رحمت ہے

 

کڑکتی دھوپ میں پرچم کھلا ہے محشر میں

چلو وہاں پہ جہاں سائبانِ رحمت ہے

 

وہ بند مٹھی میں کنکر کو دے کے حکمِ خدا

کلام جس نے کرایا زبانِ رحمت ہے

 

خدا نے سایہ نہ قائم زمیں پہ پڑنے دیا

قدم نہ آئے کسی کا یہ شانِ رحمت ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ