اردوئے معلیٰ

Search

 

لکھ سکے کون تری شان بڑی ہے ساقی

حسبِ توفیق ثنا ہم نے لکھی ہے ساقی

 

مرحبا صورتِ زیبا وہ تری ہے ساقی

جیسے کہ نور کے سانچہ میں ڈھلی ہے ساقی

 

حسنِ سیرت کی ترے دھوم مچی ہے ساقی

اس کی توصیف خود اللہ نے کی ہے ساقی

 

تو نے جو بات بھی واللہ کہی ہے ساقی

دل نشیں، صافِ اٹل اور کھری ہے ساقی

 

محفلِ ناز تری خوب سجی ہے ساقی

یارِ غارؓ و عمرؓ ، عثمانؓ و علیؓ ہے ساقی

 

گردنِ شاہ و شہنشاہ جھکی ہے ساقی

تیری سرکار بڑی، سب سے بڑی ہے ساقی

 

جو کہا تو نے اسے کر کے دکھایا اس نے

قول کا اپنے تو پکا ہے دھنی ہے ساقی

 

حسن پر آپ کے قربان کرے جاں دنیا

حسنِ یوسفؑ پہ تو انگلی ہی کٹی ہے ساقی

 

شبِ معراج سرِ عرشِ بریں بھی پہنچا

ایسی توقیر کسے اور ملی ہے ساقی

 

امتی امتی محشر میں تو ہی فرمائے

اور نبیوں کو تو اپنی ہی پڑی ہے ساقی

 

تیرے روضہ کی زیارت سے ہے محروم نظرؔ

رحمتِ رب سے مگر آس لگی ہے ساقی

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ