اردوئے معلیٰ

Search

مسلمان

 

اپنا یہ چمن دیں کی نواؤں کے لئے ہے

اسلام کی جاں بخش فضاؤں کے لئے ہے

 

ہم فلسفۂ دینِ محمد کے فدائی

دستورِ شریعت کے ہیں اس ملک میں داعی

 

ہم امن و مساوات و محبت کے پیامی

آپس میں رواداری و نصرت کے ہیں حامی

 

دنیا ہمیں درکار ہے بس دین کی خاطر

ہر دائرۂ زیست میں معروف کے آمر

 

روٹی کی طلب ہم کو پئے رشتۂ جاں ہے

تسکین مرے دل میں ہے دامن میں اماں ہے

 

اللہ کی تکبیر تگ و تاز کا مقصد

اخلاق کی سرحد مرے اعمال کی سرحد

 

رکھنی ہے ہمیں شمعِ توحید فروزاں

اس مقصدِ پاکیزہ پہ جاں بھی مری قرباں

 

سوشلسٹ

 

یہ صحنِ چمن تازہ نواؤں کے لئے ہے

الحاد کی مد مست گھٹاؤں کے لئے ہے

 

ہم فلسفۂ لینن و ماؤ کے فدائی

بے دینی و الحاد کے اس ملک میں داعی

 

ہم صرف مساواتِ شکم کے ہیں پیامی

ہم بورژوا طبقے کے ہرگز نہیں حامی

 

دنیا ہمیں درکار ہے بس نفس کی خاطر

انسان بھی اک طرح کا حیوان ہے آخر

 

روٹی کی طلب ہی تو مرا مقصدِ جاں ہے

بے چین ہوں طوفان مرے دل میں نہاں ہے

 

الحاد کی تشہیر تگ و تاز کا مقصد

ہے نانِ شبینہ مرے اعمال کی سرحد

 

کرنا ہے ہمیں شمعِ لینن کو فروزاں

اس آرزوئے دل پہ ہے ہر شے مری قرباں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ