اردوئے معلیٰ

Search

ثنا لکھیں تری کب خود کو اس قابل سمجھتے ہیں

پہ لکھتے ہیں کہ اس کو ہم غذائے دل سمجھتے ہیں

 

نبوت سب کی برحق آپ کی کامل سمجھتے ہیں

جو جس قابل ہے اس کو ہم اسی قابل سمجھتے ہیں

 

بجوفِ کن فکاں عشاق تجھ کو دل سمجھتے ہیں

تجھے اہلِ نظر کونین کا حاصل سمجھتے ہیں

 

عبادت اور ریاضت سعی لا حاصل سمجھتے ہیں

بغیرِ مہرِ سنت ہر عمل باطل سمجھتے ہیں

 

تمہارا ہی عطا کردہ ہے جو وہ دینِ برحق ہے

تمام ادیان کو منسوخ اور باطل سمجھتے ہیں

 

نہ ہو جس دل میں الفت آپ کی وہ مضغۂ خوں ہے

ہو جس میں آپ کی الفت اسی کو دل سمجھتے ہیں

 

تمہارا دامنِ رحمت نہ چھوڑیں گے نہ چھوڑیں گے

کہ وابستہ اسی سے حال و مستقبل سمجھتے ہیں

 

جو تیرے نام کی حرمت پہ نقدِ جاں لٹا بیٹھے

انہیں ہم جنت الفردوس میں داخل سمجھتے ہیں

 

نظرؔ جس کا نہ مقصودِ نظر ہو کوچۂ طیبہ

ہم ایسا راہرو برگشتۂ منزل سمجھتے ہیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ