اردوئے معلیٰ

بختِ حلیمہ جاگ گیا ہے ، ابر خوشی کے چھائے ہیں

شاہِ دو عالم نورِ مجسم اس کے مکاں پر آئے ہیں

 

آج محمد پیدا ہوئے تو نور جہاں میں چھایا ہے

جھوم رہی ہیں ساری فضائیں اور فرشتے آئے ہیں

 

جشنِ ولادت پیارے نبی کا کیوں نہ منائیں مستی میں

کوچہ کوچہ گلشن گلشن سبز علم لہرائے ہیں

 

پیدا ہوئے ہیں جب سے محمد نور کا دریا بہتا ہے

گونج رہے ہیں نوری نغمے ذرّے چمک پہ آئے ہیں

 

ہم کو فداؔ اس شان پہ اپنی فخر بھی ہے اور راحت بھی

ان کے غلاموں میں ہم بھی ہیں ان کے ہی کہلائے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات