بچھائو پھول راہوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

بچھاؤ پھول راہوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

اُجالے ہیں جہانوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

 

بہاریں ہی بہاریں ہیں گُلستانِ رِسالت میں

نئی رونق نظاروں میں مِرے سرکار آتے ہیں

 

ملائک، انبیاء و مرسلیں جشنِ ولادت میں

کھڑے ہیں سب قطاروں میں مِرے سرکار آتے ہیں

 

پکارو! مرحبا! یامصطفی، صلِّ علیٰ مل کر

خوشی ہے یہ زَمانوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

 

یہ دیکھو حشر والو! میری قسمت بھی جگانے کو

مِری مشکل کی گھڑیوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

 

میرے لب پر محمد ﷺ کا ہمیشہ نام رہتا ہے

ہمیشہ میری سوچوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

 

رضاؔ ایمان ہے بزمِ ثنا میں فضل فرمانے

کرم کے خاص لمحوں میں مِرے سرکار آتے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

امن اور آگہی ، بندگی ہیں نبی
یہ راز مجھ پہ اچانک کھلا مدینے میں
یہ ہلکا ہلکا سرور مژدہ سنا رہا ہے
نعت ایسی بھی کوئی مجھ پہ اتاری جائے
جا کے صبا تُو کوئے محمدﷺ
کوئی بھی حرف سپردِ قلم نہیں کیا ہے
چشمِ الطاف و عنایاتِ مکرر میں ہے
خامہ و ُنطق پہ ہے کیسی عنایت تیری
تمام منظرِ سیر و ثبات تیرے لئے
تصور منتہی ہو جائے جس پر رنگ و نکہت کا