عکس روئے مصطفی سے ایسی زیبائی ملی

عکس روئے مصطفی سے ایسی زیبائی ملی

خاکداں روشن ہوا ذرے کو رعنائی ملی

 

نعت گوئی سے مجھےایسی پذیرائی ملی

عام سا تھا آدمی مجھ کو بھی اونچائی ملی

 

سر زمین طیبہ میں جب آمد احمد ہوئی

کھل اٹھا رنگ چمن پھولوں کو رعنائی ملی

 

آپ کی نظر کرم سے آنکھ بینا ہو گئی

آپ کے دست شفا سے جو مسیحائی ملی

 

چاند کے ٹکڑے کئے سورج کو ہے لوٹا دیا

کیسے کیسے معجزوں سے عزت افزائی ملی

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

کالی کملی والے
نہیں ہے کام اب مجھ کو کسی سے
جانے کب اوج پہ قسمت کا ستارا ہوگا
حالِ دل کس کو سناوں آپ کے ہوتے ہوئے
ہر سانس ہجر شہ میں برچھی کی اک اَنی ہے
لکھوں مدح پاک میں آپ کی مری کیا مجال مرے نبی
اللہ نے پہنچایا سرکار کے قدموں میں
مرا کیف نغمۂ دل، مرا ذوق شاعرانہ​
مجھے عنایت، جو زندگی ہے اسی کا محور مرا نبیؐ ہے
جشن میلاد النبیؐ ہے صاحب قرآن کا

اشتہارات