غلام رسول سعیدی کا یوم وفات

آج مفسر قرآن شارح صحیحین علامہ غلام رسول سعیدی کا یوم وفات ہے۔

غلام رسول سعیدیعلامہ غلام رسول سعیدی۔
صاحب شرح صحیح مسلم۔
۔۔۔۔۔۔۔۔
دور حاضر کے محققین علماء اور محدثین میں جناب علامہ غلام رسول سعیدی صاحب کا ایک نام ہے، علامہ صاحب کی تصانیف میں قران پاک کی فقید المثال تفسیر "تبیان القران” 12 جلدوں پر مشتمل اور بخاری شریف کی شرح "نعمتہ الباری/نعم الباری” 16 جلدوں اور مسلم شریف کی "شرح صحیح مسلم” 7 ضخیم مجلدات پر مشتمل ہے۔
علامہ غلام رسول سعیدی مدظلّہ 14 نومبر 1937ء بمطابق 10 رمضان المبارک 1356 ھ بروز جمعہ دہلی "بهارت” میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم پنجابی اسلامیہ ہائی اسکول،” دہلی” میں حاصل کی۔ قیام پاکستان کے موقع پر ہجرت فرمائی اور 1947 میں پاکستان تشریف لے آئے اور کراچی میں قیام فرمایا۔ کراچی آنے کے بعد کچھ تعلیمی سلسلہ جاری رہا، لیکن پھر حالات کی ستم ظریفی کا مقابلہ کرنے کے لئے حصول معاش کیلئے کمر باندھی، لیکن اللہ ربّ العزت کو یہ منظور نہ تھا۔ اس لئے 21 سال کی عمر میں جب علامہ غلام رسول سعیدی کراچی میں واقع آرام باغ کی مسجد میں نماز جمعہ ادا کرتے تو درود و سلام کی صدائیں قلب کو جھنجھوڑ ڈالا۔ آپ نے مطالعہ قرآن شروع کیا اور مزید علم کی پیاس بجھانے کے لئے جامعہ محمودیہ رضویہ رحیم یار خان جا پہنچے۔ وہاں کے مہتمم مولانا محمد نواز اویسی تھے اس وقت، انھوں نے آپ کو علم و عمل کا پیاسا پا کر مولانا عبدالمجید اویسی کے حوالے کر دیا ۔
——
یہ بھی پڑھیں : علامہ محمد اقبال کا یوم وفات
——
اُن سے پھر آپ نے صرف و نحو، اور ادب و فقہ کی چند کتابیں پڑھیں۔ بعد ازاں جامعہ نعیمیہ لاہور تشریف لے گئے، وہاں مفتی محمد حسین نعیمی رحمۃ اللہ علیہ سے آپ نے "قطبی، شرح جامی، سلم العلوم، بدایۃ الحکمت اور تفسیر جلالین پڑھی جبکہ علامہ مفتی عزیز احمد بدایونی سے تلخیص المفتاح کے اسباق پڑھے۔
علم کی مزید طلب آپ کو رئیس المناطقہ استاد المدرسین حضرت علامہ عطا محمد بندیالوی چشتی کے تک لے گئی، اُن سے معقول و منقول کی کئی کتابیں مختصر المعانی ، قاضی مبارک ، حمد اللہ ، شمس بازغہ، صدر خیالی، مطوّل، مسلم الثبوت، توضیح التلویح اور فقہ میں ہدایہ آخرین اور
حدیث شریف میں مشکوٰۃ المصابیح اور جامع ترمذی کو بالالتزام پڑھا ۔
اسکے علاوہ جامعہ قادریہ فیصل آباد کے مولانا ولی النبی صاحب سے اقلیدس اور تصریح پڑھی جبکہ مولانا مفتی مختار حق صاحب سے "سراجی” پڑھی۔
حضرت علامہ غلام رسول سعیدی صاحب کو اللہ تعالی نے بے پناہ صلاحیتوں سے نوازا تھا اور آپ نے وہ تمام تر صلاحیتیں دین متین کی خدمت کیلئے وقف کر رکھی تھیں۔ علم حدیث اور علم تفسیر میں آپ درجہ کمال پر فائض تھے۔ آپ عالم اسلام کے وہ روشن چراغ ہیں جن کے علمی فیوض و برکات سے بیشمار لوگ استفادہ کر رہے ہیں۔
آپ اپنی ذات میں ایک مفتی، محدث، مفسر، فقیہ اور کئی ایک کتب کے مصنف تھے۔ 1986 میں صحیح مسلم شریف کی شرح لکھنا شروع کی اور 1994 میں سات جلدوں میں اسے مکمل کیا۔ اس کتاب کے آٹھ ہزار صفحات ہیں اور اس کے ابھی تک انیس ایڈیشن شائع ہو چکے ہیں۔
آپ ؒنے قرآن پاک کی تفسیر ’’تبیان القرآن‘‘ لکھی۔ 1994 میں اس تفسیر کے لکھنے کا آغاز کیا اور 2006 میں بارہ ضخیم جلدوں میں اسے مکمل کیا۔آپ ؒنے 2006 اور 2014 کے دوران بخاری شریف کی شرح سولہ جلدوں میں مکمل کی۔ پہلی سات جلدیں’’ نعمۃ الباری شرح صحیح بخاری‘‘ کے نام سے جبکہ بعد کی نو جلدیں ’’نعم الباری شرح صحیح بخاری‘‘ کے نام سے شائع ہوئیں ۔ اس طرح یہ کتاب سولہ جلدوں پر مشتمل ہے۔
علاوہ ازیں توضیح البیان، تذکرۃ المحدثین، مقالات سعیدی، مقام ولایت و نبوت، اعلی حضرت کا فقہی مقام، ذکر بالجہر، حیات استاذ العلماء، ضیائے کنزالایمان، معاشرے کے ناسور اورشان الوہیت بھی آپ کی مشہور و معروف تصانیف ہیں۔
ابھی بھی آپ قرآن پاک کی ایک اور تفسیر ’’تبیان الفرقان‘‘ کے نام سے قدرے مختلف زوق علمی سے لکھ رہے تھے۔ ابھی وہ نامکمل ہی تھی کہ زندگی نے وفا نہ کی اور آپ داعی اجل کو لبیک کہ گئے۔
——
یہ بھی پڑھیں : ممتاز شاعر پروفیسر شہرت بخاری کا یومِ وفات
——
علامہ غلام رسول سعیدی صاحب کی بعض #تصانیف کا مختصر تعارف:
شرح صحیح مسلم
پہلی کتاب شرح صحیح مسلم (غلام رسول سعیدی) میں آپ نے کائنات کی دوسری سب سے افضل کتاب صحیح مسلم کی ایسی جامع شرح کی ہے، جو آپ سے پہلے اور امام نووی کے بعد اس پوری مدت میں کسی دوسرے کی نظر نہیں آتی۔ اردو زبان میں بلا شبہ اس شرح کا بہت اعلی مقام ہے۔ یہ واحد وہ شرح ہے جو اردو ہوتے ہوئے عربی کا مکمل لطف بھی دیتی ہے اور مواد بھی۔ انداز بیان علمی اور تحقیقی ہے اور بلاشبہ آپ نے تحقیق کا حق ادا کیا ہے۔ آپ کی یہ شرح سات جلدوں پر مشتمل ہے اور ہر ہر جلد ایک ہزار سے زائد صفحات پر مشتمل ہے۔
تبیان القرآن
دوسری کتاب تبیان القرآن ہے، جو بالکل شرح مسلم کے انداز پر قرآن مجید کی جامع تفسیر ہے۔
نعمۃ الباری شرح صحیح بخاری
علامہ غلام رسول سعیدی کی کتاب نعمۃ الباری جو صحیح بخاری کی شرح ہے اس کی بھی تقریبا 14جلدیں طبع ہو چکی ہیں ،یہ شرح بھی اردو میں بخاری شریف کی بے مثل شرح ہے ،اب نے اس میں چاروں فقہی مذاہب ،حنفی ،مالکی ،شافعی ،حنبلی کو بیان کیا ہے ،شرح کی عبارت آسان ہے ،جس کی وجہ سے یہ عوام و خواص میں مقبول ہے۔
مقالات سعیدی
اس کتاب میں آپ نے اپنے لکھے ہوئے مضامین کو جمع کیا ہے، اس میں بھی آپ کے الفاظ نہایت آسان ہیں، اس میں شامل مضامین میں سے چند ایک یہ ہیں:
توحید و رسالت
تو حید پر مختلف چیزوں سے استدلال
ضرورت نبوت
علوم نبوت
منصب نبوت
عصمت نبوت
خصائص نبوت
مقام نبوت
ختم نبوت
عصمت مصطفی
حدیث لولاک
خلفاء راشدین
فاروق اعظم اور تحریم متعہ
اہلسنت و جماعت کی تعریف
اسلام کے متعدد فرقے
فاضل بریلوی کا فقہی مقام
تقدیر پر ایمان
عبادات
قیام رمضان
حقائق شب قدر
حقائق قربانی
ضرورت اجتہاد
اسلام اور تسخیر کاءنات
برصغیر کی سیاست اور علما اہلسنت
——
یہ بھی پڑھیں : نامور خطیب، عالم دین اور شاعر علامہ رشید ترابی کا یوم پیدائش
——
صدر الافاضل سید محمد نعیم الدین مراد آبادی
احمد سعید کاظمی شاہ صاحب
مفتی شجاعت
علامہ غلام رسول سعیدی صاحب کو آپکی دینی خدمات پر صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان صدر ممنون حسین صاحب کی جانب سے تمغہ امتیاز دیا گیا۔یہ تمغہ امتیاز گورنر هاؤس کراچی میں 23 مارچ 2015 کو دیا جانا تھا۔ لیکن آپ علیل هونے کی وجہ سے گورنر ہاؤس نہیں گئے اور تمغہ امتیاز آپکی رہائشگاہ دارالعلوم نعیمیہ کراچی میں آپکو دیا گیا۔
علامہ غلام رسول سعیدی 5 فروری 2016ء بمطابق 24 ربیع الثانی 1437ھ کو 79 برس کی عمر میں انتقال کر گئے، علامہ سعیدی کی تدفین جامع مسجد اقصیٰ کے احاطے میں کی گئی۔
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ