تذکرے چاروں طرف شاہِ اُمم صلی اللہ علیک وسلم! آپ کے ہیں

تذکرے چاروں طرف شاہِ اُمم ﷺ! آپ کے ہیں

ہر طرف پھیلے ہوئے نقشِ قدم آپ کے ہیں

 

ایسے اعمال ہیں اپنے کہ نہ پوچھیں آقا ﷺ!

شرم آتی ہے یہ کہتے ہوئے ہم آپ کے ہیں

 

کہہ سکیں ہم بھی سرِ بزم جہاں کاش کبھی

اب ہمارے یہ وجود اور عدم آپ کے ہیں

 

آپ کے دستِ سخاوت کے تصدق آقا ﷺ!

میرے کشکول میں سب دام و دِرم آپ کے ہیں

 

کیوں نہ ہو لائقِ تقلید حضور ﷺ! آپ کا خُلق

سارے قرآن میں اخلاق رقم آپ کے ہیں

 

نعت لکھنے سے جو پاتا ہے سکوں قلبِ عزیزؔ

میرے سرکار ﷺ! یہ الطاف و کرم آپ کے ہیں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

دل میں اترتے حرف سے مجھ کو ملا پتا ترا
تیرا مجرم آج حاضر ہو گیا دربار میں
میں کبھی نثر کبھی نظم کی صورت لکھوں
نہ زہد و اتقا پر ہے نہ اعمالِ حسیں پر ہے
ہر درد کی دوا ہے صلَ علیٰ محمد
مرحبا سید مکی مدنی العربی
رسولِ پاک کی سیرت سے روشنی پا کر
بزمِ رسولِ پاک سجانے کا وقت ہے
سوال ، لمحہ وہ کون سا تھا کہ جب یہ دونوں جہان مہکے
ارض و سما کی بزم میں، ہوتا مرا بھی نام خاص