لکھوں اِس طور سے اُن ﷺ کا قصیدہ

 

لکھوں اِس طور سے اُن ﷺ کا قصیدہ

بنا لوں میں شُنیدہ کو بھی دیدہ

 

عمل ہو اُن ﷺ کی سیرت کے مطابق

ہے جن ﷺ کو چاہنا میرا عقیدہ

 

اُنہی ﷺ کا نام مثلِ مہر چمکا

ہوا روشن دو عالم کا جریدہ

 

عمل سے لکھ سکوں اے کاش میں بھی

صحابہؓ کی طرح اُن کا قصیدہ

 

عزیزؔ احسن یقینا بعدِ رَبّ ہیں

میرے آقا ﷺ ہی سب سے برگزیدہ

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

جس کا قصیدہ خالقِ عرش بریں کہے
خدا کی مرضی کے ترجماں آپ ﷺ
کیامیسر ہے ، میسر جس کو یہ جگنو نہیں
آئینے ہم نے دیکھ لئے صبح وشام کے
زباں پر اے خوشا صل علی یہ کس کا نام آیا
مدینے میں عجب ہی صورتِ جذبات ہوتی ہے
مدحتِ شاہِ مدینہ میں کھلی ہیں آنکھیں
نظر میں ہے درِ خیرالوریٰ بحمداللہ
سرکار سے اُمیدِ نظر لے کے چلا ہوں
نہ تھے ارض وسما پہلے نہ تھے شمس وقمر پہلے