اردوئے معلیٰ

Search

پکاریں جہاں پر وہاں ہیں محمد

سکونِ دلِ مومناں ہیں محمد

 

ستائیں الم کیا زمانے کے ان کو

کہ جن پر ہوئے مہرباں ہیں محمد

 

سجے بزمِ میلاد آقا جہاں پر

غلاموں کے واں درمیاں ہیں محمد

 

مٹانے کو تیرہ شبی اس جہاں کی

لیے نورِ رحمت یہاں ہیں محمد

 

چلا تھام کر دل میں سوئے مدینہ

وہیں وارثیؔ پاسباں ہیں محمد

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ