اردوئے معلیٰ

Search

عطائے رب تعالیٰ ہے ضیائے گنبدِ خضرا

منوّر دونوں عالم ہیں برائے گنبدِ خضرا

 

نجاتِ اُخروی کا راستہ طیبہ سے ملتا ہے

ہے خوش قسمت وہی جو دیکھ آئے گنبدِ خضرا

 

مدینے میں ہمیشہ نور کی برسات ہوتی ہے

نہ کیسے نور میں ہر دم نہائے گنبدِ خضرا

 

اسے نسبت ملی ہے مصطفیٰ کے نوری جلوؤں کی

ہمیشہ نور کے چشمے بہائے گنبدِ خضرا

 

مرے سائے میں ہیں آرام فرما ہادیٔ عالم

یہی تو ہے حقیقت میں صدائے گنبدِ خضرا

 

اسی کی روشنی سے سارے عالم میں اُجالا ہے

نہ کیسے جھلملائے ، جگمگائے گنبدِ خضرا

 

کرم تو دیکھیے مجھ پر شہنشاہِ دو عالم کا

بحمداللہ مرے خوابوں میں آئے گنبدِ خضرا

 

اسی کی روشنی سارے جہاں کو نور دیتی ہے

نرالی شان سے یوں جگمگائے گنبد خضرا

 

مرے آقا کرم فرمایئے اذنِ حضوری ہو

کہ پھر آنکھوں سے خاکیؔ دیکھ آئے گنبدِ خضرا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ