اردوئے معلیٰ

Search

ساتھ کب تک کوئی چلا مت پوچھ

کس نے کی کس قدر وفا مت پوچھ

 

مختصر یہ کہ ہو گئے آزاد

کون کس سے ہوا رِہا مت پوچھ

 

تھی قیامت مگر گزر ہی گئی

تذکرہ اس کا بارہا مت پوچھ

 

پوچھ مجھ سے جو میرے دل میں ہے

لوگ کہتے ہیں کس سے کیا، مت پوچھ

 

تب مجھے بھی نہیں تھی اپنی خبر

جو ہوا اس کو بھول جا مت پوچھ

 

صبر کا میرے امتحاں مت لے

کیا تھی وہ آہِ نارسا مت پوچھ

 

ٹوٹ جائے گا ضبط کا بندھن

ظلم مجھ پر ہیں جو روا، مت پوچھ

 

اپنی وقعت بھی جانتا ہوں مگر

خود فریبی کی انتہا مت پوچھ

 

کہہ دیا جب کہ خوش ہوں تیرے بغیر

مان لے، دل کا مدعا، مت پوچھ

 

تابشیں دیکھ شمع کی عاطفؔ

جلنے والوں کا ماجرا مت پوچھ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ